تین لاکھ ریال کی تسبیح

0
75

ہاٹ لائن نیوز : سعودی عرب میں تسبیح کی صنعت بہت پرانی ہے اور زیادہ تر لوگوں کی روزی روٹی کا بہترین ذریعہ ہے۔ بعض تسبیحوں کی قیمت تین لاکھ ریال تک پہنچ جاتی ہے۔

اخبار 24 کے مطابق سعودی عرب کے مختلف علاقوں میں بہت سے لوگ ہیں جو تسبیح بنانے کا کام کرتے ہیں۔

تسبیح کا تعلق مذہب سے بھی ہے جو عام طور پر ذکر میں استعمال ہوتا ہے۔ مختلف قسم کے پتھروں کو کاٹ کر مختلف اقسام کی تسبیح تیار کی جاتی ہے۔

یہ مختلف قسم کی لکڑی کے ساتھ ساتھ قدرتی اور قیمتی پتھروں سے بھی تیار کی جاتی ہے۔ قدرتی موتیوں کے علاوہ تسبیح مصنوعی موتیوں سے بھی بنائی جاتی ہے۔

14 سال سے اس صنعت سے وابستہ حیدر الدھنین نے بتایا کہ تسبیح کی تیاری میں مختلف قسم کے پتھر اور لکڑی کا استعمال کیا جاتا ہے۔ تسبیح جانوروں کی ہڈیوں اور سینگوں سے بھی بنائی جاتی ہیں۔

حیدر الدھنین نے کہا، “تسبیح کے لیے سب سے قیمتی پتھر الکھرمان ہے، اور یہ روس اور لتھوانیا سے منگوایا جاتا ہے۔”

“یہ پیشہ ورانہ طور پر کچھ دھاگوں میں معمولی تبدیلیاں کرکے پرو دیا جاتا ہے۔”

الکھرمان پتھر اپنی نایابیت کی وجہ سے بہت قیمتی سمجھا جاتا ہے کیونکہ اس کے ایک گرام کی قیمت ہزاروں ریال تک پہنچ جاتی ہے۔ اس قیمتی پتھر سے بنی تسبیح کی قیمت تین لاکھ ریال تک پہنچ جاتی ہے۔

Leave a reply