میڈم نورجہاں کو دنیا سے رخصت ہوئے 21 برس بیت گئے

(ہاٹ لائن نیوز) سروں کی ملکہ، پاکستان کی عظیم فنکارہ ،میڈم نورجہاں کو دنیا سے رخصت ہوئے 21 برس بیت گئے،ملکہ ترنم نے جو گیت گایا،امر ہو گیا، فلموں میں گلوکاری کے ساتھ اداکاری کے جوہر بھی دکھائے.

قصور کی اللہ رکھی، جب لاہور پہنچی تو بن گئی نور جہاں، 1935 میں چائلڈ سٹار کے طور فلم “پنڈ دی کڑی” سے فلم نگری میں قدم رکھا اور بطور ہیروئن “خاندان” پہلی فلم تھی۔ پھر گلے سے آواز نکلی، اتنی سریلی، مدھر، کانوں میں رس گھولتی، اور پر سکون اور لفظوں کی ادائیگی ایسی کہ گماں ہونے لگا کہ جیسے دنیا گانے کے ساتھ ہی جھوم رہی ہے.

اللہ رکھی بطور چائلڈ سٹار فلم نگری میں قدم رکھا 26 فلموں میں مرکزی کردار ضرور نبھایا لیکن سر نکلا تو اتنی سریلی کی ہر فلم کی کامیابی کی ضمانت ہے.فلمی کیرئیر چھ دہائیوں پر محیط، لیکن گانے 10 ہزار سے بھی زائد، اردو میں گایا تو سننے والے جھومے، پنجابی گیا تو امر ہو گیا، بنگالی اور پشتو میں ان گنٹ گانے گائے اور ہر محفل، کونہ، نکڑ، محلہ، نورجہاں کی آواز سے گونج اٹھا،

گانے کے بعد جب غزلیں گائیں تو پھر بڑے بڑے میوزک ڈائیریکڑ داد دیئے بغیر نہ رہ سکے،،سر کے اتار چڑھاو میں ان کا کوئی ثانی نہیں تھا، 65 کی پاک بھارت میں جنگ ایسے ترانے گائے کہ پوری قوم یک جان ہو گئی اور ازلی دشمن بھارت کو ناکوں چنے چبوا دیئے۔

نور جہاں کو ملک ترنم کا خطاب بھی ملا، حکومت نے ان کی خداداد گانے کی صلاحیت پر تمغہ حسن کارگردگی، تمغہ امتیاز، نگار ایوارڈز سمیت سیکڑوں ایوارڈ اپنے نام کیئے.


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (0) in /home/hotlinenews/public_html/wp-includes/functions.php on line 5107