54

سندھ حکومت کو ٹف ٹائم دینے کا مشن! پی ٹی آئی اور ایم کیو ایم نے سر جوڑ لیے،پیپلز پارٹی کے لیے بری خبر

کراچی (ہاٹ لائن نیوز ) سندھ حکومت کی جانب سے بلدیاتی ترمیمی ایکٹ کے خلاف اپوزیشن جماعتیں یکجا ہوگئیں، صورتحال سے نمٹنے کیلئے ملاقاتوں کا سلسلہ جاری ہے۔تحریک انصاف نے مشاورت کے لیے ایک اعلیٰ سطحی وفد تشکیل دیدیا ہے جس کی قیادت اپوزیشن لیڈر حلیم عادل کریں گے اوروفد میں فردوس شمیم نقوی، جمال احمد، بلال غفار، سعید آفریدی اور دیگر شامل ہیں۔

ایم کیو ایم کے وفد میں خواجہ اظہارالحسن، زاہد قریشی، محمد ابوبکر سمیت دیگر شامل ہیں، ملاقات میں سندھ کی موجودہ سیاسی صورتحال ، پیپلزپارٹی کی بیڈ گورننس اور بلدیاتی ایکٹ پر مشاورت کی جائے گی۔ دونوں سیاسی جماعتوں کے رہنما سندھ کے متنازعہ بلدیاتی ایکٹ کیخلاف گرینڈ الائنس اوراحتجاجی تحریک سمیت دیگر امور پر غورو خوص کریں گے۔

واضح رہے کہ سندھ حکومت نے رواں ماہ نئے بلدیاتی نظام کا ترمیمی بل کثرت رائے سے منظور کیا تھا، بل کے تحت کراچی سمیت سندھ بھر میں بلدیاتی کونسل کے چیئرمین کا انتخاب شو آف ہینڈ سے ہوگا۔ اپوزیشن کے شدید احتجاج اور اعتراضات کے بعد سندھ حکومت نے بلدیاتی قانون کے نئی ترمیمی مسودے میں خفیہ رائے شماری کی شق واپس لے لی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں