حکومت کی چالاکیاں! ن لیگ کے گڑھ سمجھے جانے والے حلقوں میں کیا کام کرنے کا فیصلہ کر لیا؟

لاہور(ہاٹ لائن نیوز) حکومت نے سیاسی حریفوں کا مقابلہ سیاسی میدان میں کرنے کے لئے بڑا منصوبہ تشکیل دے دیا ہے،مجموعی طور پر 76 منصوبوں کی منظوری دی گئی ہے، جن میں یونیورسٹیاں، بڑی سڑکیں، فلائی اوورز، اسپورٹس، زراعت اور انڈسٹریل اسٹیٹ قابل ذکر ہیں۔ گوجرانوالہ، گجرات، سیالکوٹ، نارووال اور منڈی بہاؤالدین کو منصوبےدیئےگئے ہیں۔

ذرائع ک نے دعویٰ کیا ہے کہ کومت نے پنجاب میں ن لیگ کے گڑھ میں بڑا ترقیاتی پیکیج دے دیا ہے، ان ترقیاتی منصوبوں کی منظوری تیرہ دسمبر کو لاہور اجلاس میں دی گئی، اجلاس کی صدارت وزیراعظم عمران خان نے کی تھی۔

وزیراعظم کی جانب سے گوجرانوالہ ڈویژن کے لیےایک سو پچیس ارب کے ترقیاتی پیکیج کی منظوری دی گئی ہے، سب سےزیادہاکہتر ارب روپےسڑکوں اورفلائی اوورز کی تعمیر پر لگیں گے، چھبیس ارب روپے کی لاگت سےچاریونیورسٹیاں تعمیر کی جائینگی، یہ یونیورسٹیاں سمبڑیال، منڈی بہاؤالدین،حافظ آباد، گوجرانوالہ میں تعمیر کی جائیں گی۔

منڈی بہاؤالدین سےسرائےعالمگیرروڈ پر دس ارب روپے لگیں گے،جلالپور جٹاں سےگجرات روڈپر2 ارب روپےلاگت آئےگی اسی طرح کھاریاں ڈنگہ روڈپربھی دو ارب خرچ ہوں گے جبکہ سیالکوٹ رنگ روڈپرپندرہ ارب روپے خرچ ہوں گے۔

شیخوپورہ سے گوجرانوالہ روڈ پر5 ارب، مرید کےنارووال روڈ پرڈیڑھ ارب خرچ ہوگا جبکہ وزیرآباد ڈسکہ روڈپر فلائی اوور70کروڑکی لاگت سےتعمیرہوگا، نیوانڈسٹریل اسٹیٹ گجرات پرایک ارب30کروڑلگیں گے۔بیشتر ترقیاتی منصوبے 2023اور چند آئندہ سال میں مکمل ہوں گے۔


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (0) in /home/hotlinenews/public_html/wp-includes/functions.php on line 5107