بلوچستان کے بجٹ میں لاکھوں،کروڑوں نہیں “اربوں”روپے کی کرپشن کا انکشاف

کوئٹہ (ہاٹ لائن نیوز)آڈیٹر جنرل آف پاکستان نے بلوچستان کے بجٹ کی رپورٹ جاری کر دی ہے۔ جس میں صوبے کے بجٹ میں چودہ ارب روپے سے زائد کی مالی بے قاعدگیوں کا انکشاف ہوا ہے۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ بلوچستان حکومت نے دو ہزار انیس بیس کے بجٹ کے دوران چونتیس ارب روپے خر چ نہیں کیے جو کہ حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔ رپورٹ کے مطابق مالی سال 20-2019 کے دوران تین ارب روپے سے زائد اخراجات کا ریکارڈ ہی موجود نہیں تھا، آڈٹ رپورٹ میں سترہ مقامات پر ایک ارب اڑتیس کروڑ روپے سے زائد رقم ریکور کرنے کی نشاند ہی کی گئی ہے جب کہ چار ایسے مقامات کی نشاندہی بھی کی گئی ہے .

جن میں حکومت کو ایک ارب پینسٹھ کروڑ روپے سے زائد کا نقصان ہوا۔ آڈٹ میں حکومت کے پی ایس ڈی پی کی تشکیل کا عمل غیر مطمئن کن قرار دیا گیا ہے، آڈٹ رپورٹ میں حکومتی اخراجات کو بہتر بنانے کے لیے کوششوں کو ناکا فی قرار دیا گیا ہے جب کہ حکومت ٹیکسز اور ڈیو ٹیز بھی حاصل کرنے میں ناکام رہی۔رپورٹ میں بتایاگیا ہےکہ کمیشن اور بھو ل چوک سے سر کا ری خز انے کو بھی نقصان پہنچا ہے۔


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (0) in /home/hotlinenews/public_html/wp-includes/functions.php on line 5107