33

ڈالر کے خریدار ،خبردارہوشیار!!! سٹیٹ بینک نے بڑا قدم اُٹھا لیا

اسلام آباد(ہاٹ لائن نیوز)اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے غیر ملکی کرنسی کی خرید و فروخت کے حوالے سے اپنے قواعد میں ترمیم کرتے ہوئے ایکسچینج کمپنیوں کو پابند کیا ہے کہ وہ یقینی بنائیں کہ کوئی فرد ایک روز میں دس ہزار ڈالرز اور سال میں ایک لاکھ ڈالرز یا نقد یا ترسیلات کی صورت میں نہیں خریدے گا.

یہ اقدام اسٹیٹ بینک کی جانب سے کیے گئے دیگر اقدامات کا تسلسل ہے اور اس کا مقصد عوام کی حقیقی ضروریات پوری کرنے کے متعلق مارکیٹ کی صلاحیت متاثر کیے بغیر ایکسچینج کمپنیوں کی جانب سے سٹے بازی پر مبنی خریداری اور فروخت کی حوصلہ شکنی کرنا ہے۔

ان ترامیم کے نتیجے میں ایکسچینج کمپنیاں اس بات کو یقینی بنائیں گی کہ کوئی بھی شخص یومیہ نقد یا بیرونی ترسیلات زر کی شکل میں 10 ہزار ڈالر اور کیلنڈر سال میں ایک لاکھ ڈالر سے زائد کی خریداری نہیں کرے گا، ان حدود کو زرمبادلہ کے لیے فرد کی ذاتی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے مقرر کیا گیا ہے۔

ان حدود سے زیادہ یا دیگر مقاصد کی خاطر رقم ترسیل کرنے کے لیے افراد اپنے بینک کے ذریعے ایس بی پی بینکاری سروس کارپوریشن کے فارن ایکسچینج آپریشنز ڈپارٹمنٹ سے رابطہ کر سکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں