46

’’ نواز شریف کی حکومت گرا کر غلطی ہوئی‘‘ سابق کمانڈر اپنے اقدام پر شرمندہ، بڑا اعلان بھی کر دیا

اسلام آباد(ہاٹ لائن نیوز) سعودی نیوز ویب سائٹ اردونیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے صلاح الدین ستی نے کہا ہے کہ 12اکتوبر ان کی سالگرہ کا دن بھی ہے اور اس روز وہ سالگرہ کے موقع پر قرآن خوانی میں مصروف تھے جب انہیں بتایا گیا کہ وزیراعظم نواز شریف نے جنرل پرویز مشرف کو ہٹا کر جنرل ضیاء الدین بٹ کو آرمی چیف مقرر کر دیا ہے۔ اس کے کئی گھنٹے بعد وہ آپریشن ہوا جس کے نتیجے میں نواز شریف کا تختہ الٹا گیا اور جنرل پرویز مشرف ملک کے چیف ایگزیکٹو بن گئے۔

انہوں نے بتایا ہے کہ جولائی 1999ء میں جب انہیں سیاچن سے بلا کر ٹرپل ون بریگیڈ کا کمانڈر مقرر کیا گیا تو اس وقت سے ہی فوج اور سول حکومت کے درمیان تناؤ کی باتیں زبان زد عام تھیں۔ کہا جا رہا تھا کہ حکومت اور فوج کے درمیان بہت زیادہ غلط فہمیاں پیدا ہو چکی ہیں۔ ضیاء الدین بٹ اس وقت آئی ایس آئی کے سربراہ تھے اور میڈیا کا استعمال کرکے یہ تاثر دیا جا رہا تھا کہ شاید ہم لوگوں کی جانب سے نواز شریف کا تختہ الٹنے کی تیاری کی جا رہی ہے۔ یہ تاثر بالکل غلط تھا۔ آخری وقت تک ہمیں کسی نے نواز شریف کا تختہ الٹنے کا حکم نہیں دیا تھا اور نہ ہی اس کی کوئی پیشگی تیاری تھی۔

ہمارا کوئی جوان بھی شام تک ایوان وزیر اعظم کے اندر داخل نہیں ہوا، جب تک جنرل محمود وہاں خود نہیں پہنچ گئے۔شام کو جنرل محمود پہلی دفعہ وزیراعظم ہاؤس کے اندر گئے۔ ان کے ساتھ میجر جنرل علی جان اورکزئی اور کچھ لوگ بھی تھے۔ وہ وزیراعظم نواز شریف کو وہاں سے لے کر آئے۔ میں ایک بار پھر یہ کہوں گا کہ یہ ایک بدقسمت واقعہ تھا۔ اس کے لیے میں یہی الفاظ استعمال کر سکتا ہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں