بجٹ خسارہ پورا کرنا حکومت کے لیے نیا امتحان بن گیا!!!!قرض بھی دوگنا ہو گئے

اسلام آباد(ہاٹ لائن نیوز) رواں مالی سال کے 5 ماہ میں بجٹ خسارہ پورا کرنے کے لیے حکومت کے قرضے ایک سو آٹھ فیصد اضافے کے بعد ایک کھرب چار ارب روپے پر پہنچ گئے ہیں۔

نجی اخبار کی رپورٹ کے مطابق مطابق یہ قرضے مالیاتی خلا کو پُر کرنے کے لیے حاصل کیے گئے ہیں۔

اسٹیٹ بینک کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق کیونکہ رواں مالی سال کی پہلی ششماہی میں اخراجات میں کمی دیکھی گئی اس لیے بجٹ خسارہ پورا کرنے کے لیے لیے گئے قرضے حقیقی لیکویڈیٹی نمو کی عکاسی نہیں کرتے۔

حکومت نے گزشتہ سال اسی دورانیے میں پچاس ارب روپے قرضے لیے تھے لیکن اس کے باوجود بھی مالیاتی خسارہ جی ڈی پی کے 7.5 فیصد تھا یا مالی سال دو ہزار اکیس کے اختتام تک یہ خسارہ تین کھرب اکتالیس ارب روپے تھا۔

مالی سال دو ہزار بائیس کے لیے مالیاتی خسارہ جی ڈی پی کے 6.8 فیصد متوقع ہے، میکرو انڈیکٹرز بتاتے ہیں کہ رواں سال قرضے توقع سے کئی زیادہ ہوگا، مالی سال 2022 کے بجٹ میں مالیاتی خسارے کا ہدف تین کھرب نناوے ارب روپےمقرر کیا گیا ہے۔


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (0) in /home/hotlinenews/public_html/wp-includes/functions.php on line 5107