سابق چیف جسٹس آڈیو ٹیپ کی تحقیقات کے لیے کمیشن بنانے کی درخواست پر سماعت! اسلام آباد ہائیکورٹ نے کیا ریمارکس دیئے؟

اسلام آباد(ہاٹ لائن نیوز )اسلام آباد ہائیکورٹ میں سندھ بار کے صدر کی درخواست پر سماعت ہوئی جبکہ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے سندھ ہائیکورٹ بار کے صدر کی درخواست پر سماعت کی۔

دوران سماعت اٹارنی جنرل خالد جاود خان درخواست کے قابل سماعت ہونے پر عدالت کی معاونت کیلئے پیش ہوئے۔

عدالت کے استفسار پر عدالت کو بتایا گیا کہ درخواست آئین کے آرٹیکل 199 کے تحت دائر کی گئی ، یوں لگتا ہے کہ پراکسی درخواست ہے جو دائر کی گئی ، ایسا تاثر ملنا چاہیے کہ درخواست گزار کسی اور کا کیس لڑ رہے ہیں، کبھی کبھی ہمیں پتا نہیں ہوتا کہ ہمیں کوئی اور استعمال کر رہاہے، یہ عدلیہ کو ہراساں کرنے اور دباو ڈالنے کا سیزن ہے۔

اٹارنی جنرل نے عدالت میں مزیدکہا کہ کبھی کوئی آڈیو ،کبھی کوئی بیان آ گیا اور کبھی کوئی ڈاکیومنٹ ریلیز کیا جاتاہے، درخواست گزار نے 2017 کے واقعات کا ذکر کیاہے ، ایک وزیراعظم تھا جسے مبہم عدالتی حکم پر پھانسی دیدی گئی ،ماضی میں بریف کیس بھر کر بھی دیئے جاتے رہے ہیں۔


Notice: ob_end_flush(): failed to send buffer of zlib output compression (0) in /home/hotlinenews/public_html/wp-includes/functions.php on line 5107