33

پاکستانیوں کے لیے ایک اور بُری خبر! ادویات کی قیمتوں میں400سو فیصد اضافے کا خدشہ

اسلام آباد(ہاٹ لائن نیوز )پاکستان فارما سیوٹیکل مینوفیکچرز نے سیلز ٹیکس لگنے سے ادویات کی قیمتوں میں چار سو فیصد اضاٖفہ کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔

جن کا کہنا ہے اس اضافے سے سو روپے والی دوا کی قیمت پانچ سو روپے ہو جائیگی صدر پاکستان فارما سوٹیکل مینوفیچکرزایسوسی ایشن قاضی منصور نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتا یا کہ حکومت پاکستان آئی ایم ایف کے دباؤ پر سیلز ٹیکس نافذ کر رہی ہے۔

سیلزٹیکس کےنفاذسےادویات کی پیدواری لاگت میں اضافہ ہوگا صدر پی پی ایم اے کا کہنا تھا کہ خام مال پرسترہ فیصد سیلز ٹیکس لگانے سے ادویات مہنگی ہوں گی اور سیلز ٹیکس کے نفاذ سے سو روپے والی دوا پانچ سو کی ہو جائے گی۔

انھوں نے کہا کہ پاکستانی کمپنیزادویات کا نوے فیصد خام مال برآمدکرتی ہیں ، فارماسوٹیکل پروڈکٹس سیلزٹیکس سےمستثنیٰ ہیں، حکومت دواسازی کی اشیاپر سیلزٹیکس وصول کرتی ہے۔

اضی منصور نے درخواست کی کہ خام مال کی درآمدپرسیلزٹیکس نہ لگایاجائے، پیداواری لاگت بڑھنے پر ادویات بنانا مشکل ہو جائے گا اور ادویات کی قیمتوں میں اضافے کا بوجھ عوام پر پڑے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں