25

گورنر اور سندھ حکومت میں ٹھن گئی!عمران اسماعیل نے لوکل گورنمنٹ ترمیمی ایکت پر اعتراض لگا دیا

کراچی(ہاٹ لائن نیوز) گورنرسندھ عمران اسماعیل نے سندھ اسمبلی سے منظور ہونے والے بلدیاتی ترمیمی بل کو اعتراضات لگا کر واپس ‏کر دیا۔

گورنرسندھ نے بلدیاتی ترمیمی بل پر اعتراضات اٹھائے ہیں کہ ڈی ایم سیز کےخاتمے سے کوآرڈینیشن کا مسئلہ ‏پیدا ہو گا ور دہی علاقےشہری علاقوں کا حصہ نہیں ہو سکتے۔

گورنر سندھ نے اعتراض اٹھائے ہیں کہ میئر کا انتخاب شو آف ہینڈ سے ہوتا ہے، نئے بلدیاتی ترمیمی ایکٹ سے میئر کا انتخاب خفیہ رائے شماری سے ہوگا اور خفیہ رائے شماری سے ہارس ٹریڈنگ میں اضافہ ہوگا، نئے نظام کے تحت کوئی بھی الیکشن لڑے بغیر میئر منتخب ہو سکتا ہے۔

گورنر سندھ نے کہا ہےکہ کے ایم سی کے پاس جو اسپتال تھے وہ بھی لے لیے ہیں، بلدیہ عظمیٰ کراچی کے پاس جو بھی ٹوٹا پھوٹا ٹیکس کا نظام تھا وہ بھی لے لیا گیا ہے، اس نظام میں ایک شق یہ بھی ہے کہ وہ نوٹیفکیشن کے ذریعے اسے تبدیل یا ختم کر سکتے ہیں،گورنر سندھ نے بلدیاتی لوکل گورنمنٹ ترمیمی ایکٹ دوبارہ غور کرنے کے لیے اسمبلی بھیج دیا ہے۔

عمران اسماعیل نے کہا کہ خواہش ہے مسئلےکو سیاسی رنگ نہ دیا جائے اور حل کیا جائے تجاوزات سےمتعلق ‏آرڈیننس پر صوبائی حکومت سےبات کرنا چاہتاہوں آرڈیننس میں کچھ چیزوں پر مزید وضاحت چاہتا ہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں