33

تحریک عدم اعتماد مسترد کرنے پر ازخود نوٹس، چیف جسٹس نے پیپلزپارٹی کی استدعا مسترد کر دی

اسلام آباد (ہاٹ لائن نیوز) چیف جسٹس پاکستان نے سپیکر کی رولنگ کے خلاف از خود نوٹس کیس میں پیپلزپارٹی کی فل کورٹ بینچ بنانے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے ریمارکس دیے کہ اگر کسی کو ہم پر اعتماد نہیں تو ہم یہاں سے اٹھ کر چلے جائیں گے۔سپریم کورٹ میں سپیکر کی رولنگ کے خلاف از خود نوٹس کیس کی سماعت لارجر بینچ کر رہا ہے ، دوران سماعت پاکستان پیپلزپارٹی کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے فل کورٹ تشکیل دینے کی استدعا کی ۔
چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ آپ بتاناپسندکریں گےکہ کون سےآئینی سوالات پرفل کورٹ کی ضرورت ہے؟، فل کورٹ کی گزشتہ سال 63 سماعتیں ہوئیں،گزشتہ سال بھی فل کورٹ کی وجہ سے 10 ہزارمقدمات کااضافہ ہوا،اگرآپ کوکسی پرعدم اعتمادہےتوبتادیں،ہم اٹھ جاتےہیں۔عدالت نے پیپلزپارٹی کی فل کورٹ بینچ کی درخواست مستر د کر دی ۔ دوران سماعت بابر اعوان نے عدالت میں کہا کہ آپ نے کہا تھا کہ از خود نوٹس کیس کی سماعت کا آغاز ہو چکاہے، چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ ہم آج صرف ڈپٹی سپیکر کی رولنگ سے متعلق سماعت کر رہے ہیں ، عدم اعتماد کی تحریک کے حوالے سے درخواست پرآج ہی سماعت کرینگے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں