35

یہ قبریں پہاڑ پر کیوں اور کیسے بنی ہیں؟ ایک ایسا قبرستان جس کی اونچائی سے قبریں گر بھی جاتی ہیں

یہ قبریں پہاڑ پر کیوں اور کیسے بنی ہیں؟ ایک ایسا قبرستان جس کی اونچائی سے قبریں گر بھی جاتی ہیں
لوگ اپنے پیاوں کو دفن کرنے کے لئے کسی ایسی پرسکون جگہ کا انتخاب کرنا چاہتے ہیں جہاں انھیں فاتحہ کے لئے جانے میں آسانی ہو اس کے علاوہ مرنے والا ان کا پیارا بھی دنیا کے شور شرابے سے الگ ابدی نیند سو سکے
لیکن کراچی میں ایک ایسا بھی قبرستان ہے جہاں اونچے پہاڑ پر ترچھی قبریں بنی ہوئی ہیں۔ آخر یہ قبریں کن لوگوں کی ہیں اور اس انداز میں دفنانے کا کیا مقصد ہے؟ یہ قبرستان کراچی کے پوش علاقے کلفٹن، گزری کے مقام پر موجود ہے اور گزری قبرستان کے نام سے جانا جاتا ہے۔ اگرچہ یہ قبرستان اس لحاظ سے کافی پرسکون اور صاف ستھرا ہے کہ یہاں قبریں قطار در قطار اور اچھی حالت میں موجود ہیں اس کے علاوہ ہر طرف گھنے درخت موجود ہیں جس کی وجہ سے ہریالی بھی ہے۔ یہاں دفن ہونے والوں کی بڑی تعداد ڈیفنس اور کلفٹن کے لوگوں کی ہے جن کے انتقال کے بعد ان کے پیارے قریبی قبرستان ہونے کی وجہ سے یہاں دفن کرتے ہیں۔لیکن کافی عرصے سے یہ قبرستان مزید قبروں کے لئے بھر چکا ہے اور گنجائش نہ ہونے کی وجہ سے لوگ اب قبرستان کے اطراف میں بنی پہاڑیوں کا رخ کررہے ہیں اور اونچی پہاڑیوں کے ٹیڑھی میڑھی سطح پر مردے دفنا رہے ہیں جس کی وجہ سے یہ قبریں نہ صرف دیکھنے میں عجیب منظر پیش کرتی ہیں بلکہ بارش کی صورت میں ان کے گرنے کی کئی ویڈیوز بھی وائرل ہوچکی ہیں۔سوشل میڈیا صارف شہزاد قریشی اس صورت حال پر تبصرہ کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ “گزری قبرستان بھر چکا ہے لوگ زبردستی اپنے رشتے داروں کو پہاڑوں پر دفنا رہے ہیں تو اس کا تو یہی نتیجہ نکلنا تھا“

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں