کتاکاٹ لےتو20 ہزار روپےمعاوضہ ملےگا

0
139

 

ہاٹ لائن نیوز: جسٹس ونود ایس بھردواج کی سربراہی والی بنچ نے چندی گڑھ میں کتوں کے کاٹنے کی بڑھتی ہوئی تعداد پر تشویش کا اظہار کیا اور 193 درخواستوں کو نمٹاتے ہوئے معاوضے کا فیصلہ کیا۔

کتے کے کاٹنے کے بڑھتے ہوئے معاملات کو دیکھتے ہوئے پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ نے ایک انتہائی اہم فیصلہ سنایا ہے۔ عدالت نے کہا کہ سڑکوں پر آوارہ کتوں کی تعداد میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ ایسے میں اگر کسی کو ان کتوں نے کاٹ لیا تو دونوں ریاستوں (پنجاب اور ہریانہ) کو معاوضہ ادا کرنا پڑے گا۔ عدالت نے متاثرہ شخص کو جسم پر دانت کے نشان کے بدلے 10 ہزار روپے ہرجانہ دینے کا حکم دیا۔ یعنی شکار کو کتے کے کاٹنے پر کم از کم 10 روپے کا معاوضہ ملنے کی ضمانت ہے۔

جسٹس ونودکی سربراہی والی بنچ نے چندی گڑھ میں کتے کے کاٹنے کے بڑھتے ہوئے واقعات پر تشویش کا اظہار کیا اور ریاستی حکومتوں کو ہدایت دی کہ وہ اس کے لیے رہنما خطوط تیار کریں۔ عدالت نے یہ فیصلہ 193 درخواستوں پر غور کرتے ہوئے جاری کیا۔ بنچ کا کہنا ہے کہ اگر کتے کے کاٹنے سے دانت کے نشانات بنتے ہیں تو متاثرہ کو 10 ہزار روپے فی دانت کے نشان کے حساب سے معاوضہ دیا جائے۔ اس کے علاوہ اگر کتے کے کاٹنے سے کوئی زخم یا گوشت نکل آئے تو 0.2 سینٹی میٹر کے ہر زخم کے لیے کم از کم 20 ہزار روپے معاوضہ دیا جائے۔

Leave a reply