ڈپریشن میں اضافےکی بڑی وجہ سامنےآگئی

0
92

ہاٹ لائن نیوز : موجودہ دور میں نوجوانوں میں ڈپریشن کے کیسز تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق نیند کی کمی کے صحت پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں اور یہ کئی بیماریوں کا باعث بنتی ہے۔ ڈپریشن میں مبتلا افراد کو ذہنی اور جسمانی دونوں طرح کے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

اب ایک تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ نیند کی کمی اور کم نیند نوجوانوں میں ڈپریشن اور خودکشی کے خیالات کا خطرہ بڑھاتی ہے۔

سویڈن کے نیشنل سینٹر فار سوسائیڈ ریسرچ اینڈ پریونشن کی اس تحقیق میں اسکول کے 116 طلبہ کو شامل کیا گیا۔

ان طلباء سے سونے اور جاگنے کے اوقات کی تفصیلات حاصل کی گئیں تاکہ معلوم کیا جا سکے کہ عام دنوں اور چھٹیوں میں ان کی نیند کا دورانیہ کیا ہوتا ہے۔

ان نوجوانوں سے یہ بھی پوچھا گیا کہ ان کی نیند کا معیار کیسا ہے، آیا وہ افسردہ علامات یا خودکشی کے خیالات کا سامنا کر رہے تھے۔

50 فیصد نوجوانوں کی نیند کا دورانیہ اسکول جاتے ہوئے 8 گھنٹے سے کم تھا، جب کہ بہت سے لوگوں کا کہنا تھا کہ وہ رات کو دیر تک جاگنے کے عادی ہیں۔

نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ جن نوجوانوں نے ڈپریشن اور خودکشی کے خیالات کی اطلاع دی ان میں نیند کی کمی کا بھی زیادہ امکان تھا۔

محققین نے کہا کہ نوجوانی میں نیند کی کمی ڈپریشن اور دیگر دماغی صحت کے مسائل کا خطرہ بڑھاتی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ تقریباً 50 فیصد نوجوانوں نے اعتراف کیا کہ وہ عام دن میں 8 گھنٹے سے کم سوتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کی نیند کو بہتر بنانے سے ان کی ذہنی اور جسمانی صحت کو بہتر بنانے میں مدد مل سکتی ہے جبکہ مختلف بیماریوں سے بچنا آسان ہو جاتا ہے۔

Leave a reply