پی ٹی آئی کا حکومتی اقدامات پر عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ 34

پی ٹی آئی کا حکومتی اقدامات پر عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ

پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے گزشتہ رات سے جاری پارٹی رہنماؤں اور کارکنان کے گرفتاریوں کے حکومتی اقدامات پر عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اس حوالے سے پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے بتایا ہے کہ اسلام آباد میں پرامن مارچ ہمارا آئینی اور قانونی حق ہے اور ہم اپنے آئینی اور قانونی حق کے تحفظ کیلئے عدالت جارہے ہیں۔

سابق وفاقی وزیر شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ حکومت شدید بوکھلاہٹ کا شکار ہے نہیں سمجھ نہیں آ رہا کہ کیا کریں۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے شامہ محمود قریشی نے کہا کہ کارکنان اور رہنماؤں کی گرفتاریوں کے یہ ہتھکنڈے ماضی میں کام آئے نہ آئندہ کارآمد ہونگے۔

انہوں نے کہا کہ کل رات سے جس فسطائیت کا مظاہرہ کیا گیا ہے اس سے حکومت کی بوکھلاہٹ کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پکڑدھکڑ ہمارے لانگ مارچ کو نہیں روک سکتی اور انہیں شائد علم نہیں کہ یہ تحریک، پی ٹی آئی سے کہیں آگے جا چکی ہے۔

سابق وفاقی وزیر نے کہا کہ آج ہر پاکستانی جو پاکستان کی خودمختاری اور حقیقی آزادی پر یقین رکھتا ہے وہ اس تحریک کا حصہ بن چکا ہے، طلباء، پروفیشنلز، ڈاکٹرز، انجینیرز سمیت ہر طبقے کے لوگ اس تحریک میں شامل ہو چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت نئے انتخابات کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ آصف علی زرداری ہیں کیوں کہ انہیں علم ہے کہ اگر اب الیکشن ہو جاتے ہیں تو انہیں حاصل، حصول کچھ نہیں ہو گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہماری سوچ بالکل واضح ہے ہم نے آئین اور قانون کے اندر رہتے ہوئے اپنی جدوجہد جاری رکھنی ہے، ہم نے بیرونی غلامی قبول نہیں کرنی اور ہم نے اندرونی فسطائیت کا ڈٹ کر مقابلہ کرنا ہے۔

اس دوران بات کرتے ہوئے اسد عمر کا کہنا تھا کہکسی تحریک کودباکرپاکستان بندکیاجاسکتاہےلیکن چلایانہیں جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ رات ساڑھے11بجےکےبعدگرفتاریوں کاسلسلہ شروع ہوا لیکن بزدلانہ کارروائیوں سےہمارےحوصلےپست نہیں ہونگے،۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں