پولیس افسران کوبڑارگڑا

0
69

لاہور: ( ہاٹ لائن نیوز) لاہور ہائی کورٹ میں پرویز الہی کو بحفاظت گھر نہ پہچانے کے خلاف دائر توہین عدالت کی درخواست پر سماعت ہوئی ۔

عالت نے ڈی آئی جی انوسٹیگیشن ، ڈی آئی جی آپریشن اور ایس پی سکیورٹی کو فرد جرم کے لیے طلب کرلیا ۔

عدالت نے پولیس افسران کے جواب کو غیر تسلی بخش قرار دیتے ہوئے دو اکتوبر تک سماعت ملتوی کردی ۔

عدالت نے استفسار کیا کہ عدالت کا کلئیر حکم تھا کہ پرویز الہی کو کسی مقدمے میں گرفتار نہ کیا جائے پھر کیوں گرفتار کیا گیا ؟

سرکاری وکیل کا کہنا تھا کہ اسلام آباد پولیس نے تھری ایم پی او کے تحت گرفتار کیا

جسٹس مرزا وقاص روف کا کہنا تھا کہ ایک ایس پی آیا اور اس نے کہا کہ عدالت کے احکامات کو ایک طرف رکھو ، ایس پی اسلام آباد کے آگے یہ پولیس افسران بے بس ہوگئے ، پنجاب پولیس اسلام آباد پولیس کے آگے بے یارو مددگار تھی ، اسلام آباد پولیس کوئی سپیرئیر پولیس تھی ، اسی لیے پولیس پر عوام کو اعتماد نہیں رہا ، کیا کوئی رول آف لاء ہے ؟

جسٹس مرزا وقاص روف نے مزید کہا کہ اگر پولیس افسران پریشر برداشت نہیں کرسکتے تو وردی اتار کر کوئی اور کام کریں ۔

Leave a reply