11

نیوی گالف کورس اسلام آباد کی تعمیر کو غیر قانونی قرار دینے کا تحریری فیصلہ جاری

اسلام آباد (ہاٹ لائن نیوز) ہائیکورٹ نے نیوی گالف کورس کی تعمیر غیر قانونی قرار دینے سے متعلق کیس کا تحریری فیصلہ جاری کر دیا۔
چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے مارگلہ ہلز نیشنل پارک میں تعمیرات غیر قانونی قرار دینے سے متعلق کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کیا، چیف جسٹس نے تعطیلات پر روانگی سے قبل فیصلہ تحریرکرکے دستخط کیے جو آج جاری کیا گیا، 105 صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلے میں اسلام آباد انوائرمنٹل کمیشن کی رپورٹ کو بھی حصہ بنایا گیا ہے۔عدالت نے نیوی گالف کورس کی تعمیر غیر قانونی قرار دیتے ہوئے وزارت دفاع کو انکوائری کا حکم جاری کر دیا۔عدالت نے سیکرٹری دفاع کو نیوی گالف کلب کا فارنزک آڈٹ کرا کے قومی خزانے کو پہنچنے والے نقصان کا تخمینہ لگانے کا حکم دے دیا۔اسلام آباد ہائیکورٹ نے نیشنل پارک کی 8068 ایکڑ اراضی پر فوج کے ڈائریکٹوریٹ کا ملکیتی دعویٰ بھی مسترد کرتے ہوئے پاک فوج کے فارمز ڈائریکٹوریٹ کا مونال ریسٹورینٹ کے ساتھ لیز معاہدہ بھی غیر قانونی قرار دے دیا۔ عدالت نے فیصلے میں لکھا کہ ریاست اور حکومتی عہدیداران کا فرض ہے کہ وہ مارگلہ ہلز کا تحفظ کریں، ریاست کی ذمہ داری ہے کہ عوام کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرے۔ اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیصلے میں لکھا گیا ہے کہ مارگلہ ہلز کے محفوظ نوٹیفائیڈ ایریا کی بے حرمتی میں ریاستی ادارے کا ملوث ہونا ستم ظریفی ہے، پاک بحریہ اور پاک فوج نے قانون اپنے ہاتھ میں لے کر نافذ شدہ قوانین کی خلاف ورزی کی، یہ قانون کی حکمرانی کو کمزور کرنے اور اشرافیہ کی گرفت کا ایک مثالی کیس تھا۔ عدالت نے فیصلے میں لکھا کہ ریاست کا فرض ہے کہ وہ مارگلہ ہلز کو پہنچنے والے نقصان کے ازالے کے لیے اقدامات کرے تاکہ اسے مزید تباہی سے بچایاجا سکے۔ یاد رہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے 11 جنوری 2022 کو اس کیس کا مختصر فیصلہ جاری کیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں