ملک میں پہلی ڈیجیٹل مردم شماری؛ ادارہ شماریات اور نادرا میں معاہدہ 56

ملک میں پہلی ڈیجیٹل مردم شماری؛ ادارہ شماریات اور نادرا میں معاہدہ

اسلام آباد(ہاٹ لائن): پاکستان بیورو آف شماریات اور نیشنل ڈیٹا بیس رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) کے درمیان مفاہمتی یادداشت کا معاہدہ طے پاگیا۔

ایم او یو کے تحت نادرا ملک کی ساتویں اور پہلی ڈیجیٹل مردم شماری و خانہ شماری 2022 کیلئے ادارہ شماریات کو ٹیبلٹ اور ڈویلپمینٹ سافٹ ویئر فراہم کرے گا۔ پہلی مرتبہ مردم شماری کیلئے ٹیکنالوجی کو استعمال کیا جائے گا۔

اس موقع پر احسن اقبال نے کہا کہ جتنا اچھا سافٹ ویئر ہوگا اتنا ہی اچھا رزلٹ ہوگا، امید ہے نادرا نےاچھا سافٹ ویئر بنایا ہوگا، ادارہ شماریات مردم شماری کے نتائج بروقت الیکشن کمیشن کو فراہم کرے گا جس کے نتیجے میں الیکشن کمیشن نئی حلقہ بندیاں کرسکے گا۔
چیف اسٹیٹیشن نعیم ظفر نے کہا کہ اس بار بڑے پارٹنرز میں نادرا، اسپارکو، مسلح افواج ہیں، ڈیجیٹل مردم شماری میں ایک لاکھ 26 ہزار ٹیبلٹ استعمال ہونگے، منصوبے پر 13.41 ارب روپے لاگت آئے گی، ڈیجیٹل مردم شماری کا پائلٹ پراجیکٹ 18 جولائی سے شروع ہوگا اور یکم اگست 2022 کو مکمل ہوگا۔

چیئرمین نادرا طارق ملک کا کہنا تھا کہ یہ پہلی مردم شماری ہے جو ڈیجیٹل ہونے جارہی ہے، اگر کسی کو مردم شماری پر اعتراضات ہونگے تو ٹیکنالوجی کی مدد سے فوری طور پر انہیں دور کیا جاسکے گا، نادرا یوزر فرینڈلی ویب بیسڈ سسٹم بھی متعارف کروارہے ہیں، اس پورٹل کے ذریعے شہری خود بھی اپنی رجسٹریشن کرواسکیں گے جس کی چیکنگ بھی ہوگی، پائلٹ پراجیکٹ کے تحت 500 بلاک میں ڈیجیٹل مردم شماری کی جائے گی جس کے بعد اس کا دائرہ کار ملک بھر میں پھیلادیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں