ماڈل ٹاؤن میں پی ٹی آئی رہنما کے گھر پر چھاپے کے دوران پولیس اہلکار جاں بحق 37

ماڈل ٹاؤن میں پی ٹی آئی رہنما کے گھر پر چھاپے کے دوران پولیس اہلکار جاں بحق

پولیس کی جانب سے پی ٹی آئی ایکٹیوسٹ کے خلاف کریک ڈاؤن کے دوران ایک پولیس اہلکار گولی لگنے کے باعث جاں بحق ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق کانسٹیبل کمال احمد پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے مقامی رہنما کی گرفتاری کے لیے ماڈل ٹاؤن سی بلاک میں واقع رہائش گاہ پر پولیس ٹیم کے چھاپے کے دوران ہلاک ہوگئے۔

اس حوالے سے ڈی جی آپریشنز کا کہنا ہے کہ ساجد نامی پی ٹی آئی ایکٹیوسٹ کے گھر کی چھت سے فائر کیا گیا جو کمال احمد کی چھاتی میں لگا، کوشش کے باوجود جانبر نہ ہوسکا۔

انہوں نے بتایا کہ فائر کرنے والے کی گرفتاری کے لئے ریڈ کیا گیا ہے جس دوران گرفتاریاں عمل میں آئیں ہیں۔

گرفتار ملزموں میں عکرمہ اور والد ساجد شامل ہیں تاہم ملزم کی شناخت فورانزک اور تفتیش کے بعد کی جائیگی۔

خیال رہے کہ پولیس کانسٹیبل ماڈل ٹاؤن میں تعینات تھا اور گزشتہ 15 سال سے اپنی خدمات انجام دے رہا تھا۔

اس واقعے کی مذمت کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے شدید برہمی کا اظہار اور مذمت کی ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ گالیاں برسانے والوں نے گولیاں برسانا شروع کردی ہیں، بے گناہ پولیس اہلکار کمال احمد کے سینے میں لگی گولی ثبوت ہے کہ عمران خان دہشتگرد ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ کوئی سیاسی سرگرمی نہیں، پرامن مارچ چاہتے ہی نہیں تھے۔ ’خونی مارچ ہوگا‘ کے اعلانات کرنے والوں سے بلکل حساب لیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں