9

مائیکل جیکسن کی موت کی اصل وجہ کیا تھی؟ سالوں بعد گلوکار اکون کا انکشاف

لندن: امریکی معروف گلوکار اکون نے مائیکل جیکسن کی موت کے حوالے سے اہم انکشافات کردیئے۔
غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق اکون نے برطانوی جریدے کی دستاویزی فلم ‘?Who Really Killed Michael Jackson’ میں انکشاف کیا ہے کہ مائیکل جیکسن کی اپنے کام سے محبت اوروابستگی ہی جان لیوا ثابت ہوئی۔
ایکون نے بتایا کہ دنیا کے دلوں پر راج کرنے والے مائیکل جیکسن کا 2009 میں لندن میں ایک بہت بڑا کنسرٹ تھا لندن میں میگا پرفارمنس کی خوشی میں وہ کئی دن سوئے بھی نہیں اور نیند کیلئے انہیں گولیاں کھانی پڑیں۔
تاہم وہی گولیاں ان کی زندگی نگل گئیں ان ادویات کے زیادہ استعمال کی وجہ سے مائیکل جیکسن کی موت واقع ہوئی۔
ایکون نے یہ بھی بتایا کہ وہ لندن میں کنسرٹس میں پرفارمنس دینے کے لیے بھرپور جوش اور ولولے کے ساتھ تیاری کر رہے تھے, ان کا اپنے کام سے شدید لگاؤ اور جنون ہی مائیکل جیکسن کے لئےخطرناک ثابت ہوا۔
ایکون نے کہا کہ 2009 میں پچاس برس کی عمر میں جب مائیکل جیکسن کا جسم اس قدر توانا نہ تھا مگر ان کا ذہن ہر بہت زیادہ کام کرتا تھا اور وہ پھر بھی 24 گھنٹے کام کرتے رہتے تھے۔
یاد رہے کہ پاپ میوزک کو جنم دینے والے مائیکل جیکسن کی موت کے 13 برس بعد بھی دنیا بھر میں موجود ان کے مداح آج بھی انکی اچانک موت کے سبب کو جاننا چاہتے ہیں۔
اکون نے یہ بتایا کہ ان کی اورمائیکل جیکسن کے درمیان تعلقات ایک اچھی دوستی میں بدل گئے اور ان کا ڈو اِٹ گانا بھی تیاری کے مراحل میں تھا اس لئےوہ زیادہ تر وقت ساتھ گزارتے تھے۔
ایکون نے بتایا کہ کیسے مائیکل جیکسن نے ان کی زندگی کو تبدیل کر دیا، انکی بدولت ہی معلوم ہوا کہ میوزک انڈسٹری کیسے کام کرتی ہے اور کن باتوں کو مدنظر رکھنا ضروری ہے۔
مائیکل جیکسن کی موت کے بعد اکون اور مائیکل جیکسن کا ڈواٹ سانگ’ہولڈ مائی ہینڈ‘ریلیز کیا گیا جو کئی ہفتوں تک ٹاپ میوزک بنا رہا۔
واضح رہے کہ جون 2009 میں پاپ میوزک کے بے تاج بادشاہ مائیکل جیکسن لاس اینجلس کیلیفورنیا میں مردہ پائے گئے، گلوکار کی موت نیند کی گولی کھانے کی وجہ سے دل کا دورہ پڑجانے سے ہوئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں