لیول پلئینگ فیلڈ سے کون انکاری ؟

0
126

 

ہاٹ لائن نیوز : مسلم لیگ ن کے رہنما میاں جاوید لطیف کا کہنا ہے کہ آپ کہتے ہیں کہ نواز شریف کو فاسٹ ٹریک پر انصاف مل رہا ہے، اگر کوئی مجرم ہے تو اسے سزا ملنی چاہیے تاکہ معلوم ہو سکے کہ ملک کا خیر خواہ کون ہے۔ انتخابات سے قبل نواز شریف اور چیئرمین پی ٹی آئی کو انصاف ملنا چاہیے۔

 

لاہور پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے جاوید لطیف نے کہا ہے کہ کوئی مجھے سمجھائے کہ آج کیا ہو رہا ہے، کیا آپ کے خیال میں واٹس ایپ پر کمیشن بنانے کا طریقہ کار ہے؟

 

ان کا کہنا ہے کہ اگر کوئی 9 مئی کا پودا لگانا چاہتا ہے تو یہ غلط ہے ، جاوید لطیف نے کہا ہے کہ صدر دہشت گردی کے منصوبہ سازوں کے ساتھ رہے ہیں، کہتے ہیں چیئرمین پی ٹی آئی کا کارکن رہا ہوں ۔ ہاں، 9 مئی کے ماسٹر مائنڈ نے جو کیا وہ ٹھیک تھا، تو اب کیا سمجھوں، ۔

 

 

ان کا کہنا ہے کہ 9 مئی کا پلانٹ لگانے کا مطلب ہے کہ وہ پاکستان کی اینٹ سے اینٹ بجانا چاہتے ہیں۔جاوید لطیف نے کہا ہے کہ ہم ملک کو آگے لے جانا چاہتے ہیں۔ آگے بڑھو، 9 مئی کے پودے کی کاشت کے لیے آگے نہ بڑھو۔

 

رہنما مسلم لیگ کا کہنا ہے کہ ریاست کو ضرورت ہوتی تو انصاف کے دروازے کھل جاتے، اب خطے کو نواز شریف کی ضرورت ہے۔ یہ محسوس کرتے ہوئے کہ اب انتقام سے بھری یہ رکاوٹیں راہ میں حائل نہیں ہو سکتیں۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ کسی کی خواہش ہو سکتی ہے کہ وزیر اعظم جیالا ہو یا متوالا، لیکن نتائج کے بعد کس کی خواہش پوری ہو گی۔ ووٹ کو عزت دو کا مطلب یہ ہے کہ آئینی ادارے آئینی حدود میں رہ کر کام کریں۔ ووٹ کو عزت دو کا مطلب یہ نہیں کہ آپ مجھے ووٹ کے بغیر باری دیں۔ یہ ووٹرز نے دیا ہے، یہ پاکستان کے عوام نے دیا ہے، یہ ایک ریاست ہے، یہ آزاد پاکستان ہے، یہ 25 کروڑ عوام کا پاکستان ہے۔ جاوید لطیف نے کہا ہے کہ تمام اداروں کو یہ تاثر نہ دیا جائے کہ شفاف انتخابات نہیں ہو سکتے، تمام سیاسی قوتوں کو انصاف دینا چاہیے۔ تقاضے پورے کیے جائیں،

 

لیول پلیئنگ فیلڈ یہ ہے کہ نواز شریف زیر التواء کیسز کی تاریخ طے کی جائے تاکہ انصاف کے تقاضے پورے ہوں، جو لیول پلیئنگ فیلڈ کے خلاف ہے، سب کو لیول پلیئنگ فیلڈ ملنی چاہیے۔ لیکن اگر ووٹ کو عزت دی جائے تو ادارے آئینی حدود میں رہ کر پاکستان کو اس بھنور سے نکال سکتے ہیں۔مسلم لیگ کے رہنما نے کہا کہ تاثر دیا جا رہا ہے کہ نواز شریف قومی حکومت بنانے جا رہے ہیں، ہم قومی حکومت بنائیں گے۔ تاکہ ہم پاکستان کو اس بھنور سے نکالیں۔ قوم بہترین ہے، ہم سب کو ساتھ لے کر چلیں گے، پاکستان کو آگے لے جانا چاہتے ہیں۔

 

جاوید لطیف کا کہنا ہے کہ عمران خان کو جیل میں وہ سہولیات مل رہی ہیں جو کسی قیدی کو میسر نہیں، بات یہاں تک پہنچی کہ وہ 3 دن بکری کا دودھ اور 4 دن اونٹنی کا دودھ پییں گے، جیل کے باہر کون سی سہولیات میسر نہیں تھیں جوجیل کے اندر ہیں۔

 

انہوں نے کہا کہ مجھے توہین عدالت کا نوٹس ملے تو کس سے بات کروں؟آج بھی سہولت ہے، اگر عدالت میں عدم پیشی پر اپیل مسترد ہو جائے اور ہمارے آنے پر ہی بحال ہو جائے تو اسے ڈیو پراسیس نہیں کہا جاتا، ڈیو پراسیس واٹس ایپ پر جے آئی ٹی بنانا ہے، ڈیو پروسیس کو صادق اور سرٹیفیکیٹ کا نام دیا جاتا ہے۔ امین جسٹس ثاقب نثار نیشنل لیگ کے رہنما جاویدلطیف نے کہا ہے کہ جسٹس ثاقب نثار کو جسٹس بندیال نے انصاف دینے پر نظرثانی کی،

انہوں نے کہا کہ 9 مئی کے ماسٹر مائنڈ کا دوبارہ جائزہ لیا جائے۔ کیا اس نے اعتراف کیا کہ امریکہ میں القاعدہ کی تربیت غلط تھی؟ کیا اس نے تسلیم کیا کہ میرے غلط فیصلوں کی وجہ سے معیشت تباہ ہوئی اور میرے لیے آر ٹی ایس لایا گیا؟

جاوید لطیف نے انصاف کی بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ انصاف کے اہلکاروں کو پتہ ہی نہیں تھا کہ پلے بوائے صادق اور امین نہیں، وہ کیا طریقہ کار بتائیں گے، ثاقب نثار صادق اور امین کا سرٹیفکیٹ دیں، انصاف پسند لوگوں کو معلوم ہی نہیں تھا کہ پلے بوائے صادق اور امین ہے۔ صادق اورامین کہتے ہیں آپ یہ کیوں نہیں کہتے کہ چیئرمین پی ٹی آئی کے زیر التوا کیسز کی تاریخ طے کی جائے، آج بھی آپ تسلیم کرتے ہیں کہ میں چیئرمین پی ٹی آئی کا ورکر ہوں، آپ 9 کی مذمت کیوں نہیں کرتے۔ نو مئی کا ماسٹر مائنڈ، جمہوری پلانٹ اورنو مئی پودے کے برابر نہیں ہونا چاہیے۔

میانوالی ایئر بیس پر حملے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میانوالی ایئر بیس پر حملہ کرنے والوں سے معافی مانگی جائے گی، پھر ایسا نہیں ہونے دیں گے۔ کیا پاکستان کی تاریخ میں آج تک دشمن کو میانوالی ایئر بیس کی طرف میلی آنکھ سے دیکھنے کی جرات ہوئی ہے؟جاوید لطیف نے یہ بھی کہا ہے کہ 5، 7 روز قبل اسی میانوالی میں بیس پر دہشت گردوں نے حملہ کیا تھا، کیا آپ دہشت گردوں پر حملہ کرنے والوں کو سیاسی کارکن کہیں گے؟ 9 مئی کو تنصیباب پر حملہ کرنے والے سیاسی کارکن تھے یا دہشت گرد؟

Leave a reply