قومی میڈیا کیلیے ضابطہ اخلاق جاری

0
65

اسلام آباد: ( ہاٹ لائن نیوز) الیکشن کمیشن نے قومی میڈیا کے لیے 17 نکاتی ضابطہ اخلاق جاری کیا ہے ، جس میں پرنٹ، الیکٹرانک، ڈیجیٹل میڈیا اور سوشل میڈیا شامل ہیں۔

قومی میڈیا پاکستان کے نظریات، خودمختاری، سلامتی، عدلیہ اور اداروں کے خلاف رائے کی عکاسی نہیں کرے گا اور ایسے بیانات نشر نہیں کیے جائیں گے جن سے قومی یکجہتی، امن کو خطرہ ہو۔

ضابطہ اخلاق کے مطابق ایسا کوئی مواد شامل نہیں کیا جائے گا جو کسی سیاسی جماعت، مذہب، برادری کی بنیاد پر ذاتی حملہ ہو۔

پیمرا، پی ٹی اے، پی آئی ڈی، وزارت اطلاعات کا سائبر ڈیجیٹل ونگ کوریج کی نگرانی کرے گا، پولنگ ڈے کے 10 دن کے اندر امیدوار ادائیگی کی تفصیلات دیں گے اور قانون نافذ کرنے والے ادارے میڈیا کے نمائندوں اور گھروں کو سیکیورٹی فراہم کریں گے۔

قومی خزانے سے کسی سیاسی جماعت یا امیدوار کی انتخابی مہم نہیں چلائی جائے گی، ووٹر آگاہی پروگرام چلائے جائیں گے، انتخابی میڈیا مہم الیکشن کے دن سے 48 گھنٹے قبل ختم کر دی جائے گی، انتخابی عمل میں رکاوٹ نہیں ڈالی جائے گی۔

انٹری، ایگزٹ پول، پولنگ سٹیشن یا پرسنکٹ سروے سے گریز کیا جائے گا، صرف تسلیم شدہ میڈیا کے نمائندے پولنگ سٹیشن میں پولنگ کے عمل کی ویڈیو بنانے کے لیے داخل ہوں گے، میڈیا کے نمائندے کیمروں کے بغیر گنتی کا مشاہدہ کریں گے۔

میڈیا کے نمائندے الیکشن سے پہلے، دوران یا بعد میں مداخلت نہیں کریں گے، پولنگ ختم ہونے کے ایک گھنٹے بعد تک نتیجہ نشر نہیں کیا جائے گا۔

نتائج شائع کرتے وقت یہ ذکر کیا جائے گا کہ یہ غیر سرکاری، نامکمل نتائج ہیں، ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر صحافی یا میڈیا ادارے کا ایکریڈیشن ختم کیا جا سکتا ہے۔

Leave a reply