8

فیصل آباد میں پیش آنے والے افسوسناک واقعے پر شوبز شخصیات کا ردِعمل

کراچی: (ہاٹ لائن)پاکستان شوبز انڈسٹری سے وابستہ افراد نے فیصل آباد میں میڈیکل کی طلبہ کے ساتھ پیش آنے والے افسوسناک واقعے پرشدید ردِعمل دیا ہے۔
سوشل میڈیا کے مختلف پلیٹ فارمز پر ادکااراحمد علی بٹ، فیضان شیخ سمیت کئی شوبز شخصیات نے فیصل آباد واقعے پر اظہارِ برہمی کرتے ہوئے واقعے کی شدید مذمت کی ہے۔
اداکار و میزبان احمد علی بٹ نے انسٹا اسٹوری پر لکھا کہ ’’شدید افسوس کا مقام ہے، اللہ غرق کرے، ہر چند دن بعد ایسے واقعات دیکھنے میں آرہے ہیں، پہلے نور مقدم کیس اور اب یہ‘‘۔
’نور مقدم کیس اور اب فیصل آباد تشدد کیس‘، شوبز شخصیات پھٹ پڑیں-
انہوں نے مزید لکھا کہ ’’جس طرح نور مقدم کیس میں خاموشی اختیار کی اور اس کے ملزم آزاد گھوم رہے ہیں، اسی طرح اس کیس میں بھی ایسا ہی ہوگا،یہ ہمارے ملک کی بدصورت حقیقت ہے کہ امیروں کے لیے کوئی قانون نہیں ہے‘‘۔
’نور مقدم کیس اور اب فیصل آباد تشدد کیس‘، شوبز شخصیات پھٹ پڑیں
اداکارہ مشی خان نے شیخ دانش کی ضمانت پر رہائی کی خبر انسٹا اسٹوری پر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ ’’ایسے افراد دوزخ میں جلیں، یہ انصاف ہے کہ ملزمان آزاد گھوم رہے ہیں اور مثال قائم کر رہے ہیں کہ کچھ بھی کرلو اور پچاس ہزار ضمانت دے کر چُھوٹ جاؤ‘‘۔
اداکار فیضان شیخ نے طنزیہ انداز میں لکھا کہ’’شکر ہے کہ بےحسی اولمپکس کا حصّہ نہیں ہوتی ورنہ سارے طلائی تمغے ہمارے پاس ہوتے‘‘۔
’نور مقدم کیس اور اب فیصل آباد تشدد کیس‘، شوبز شخصیات پھٹ پڑیں-
دنانیرمبین کا کہنا ہے کہ ’’نام لیں اور شرمندہ کریں، اسے جانور بھی نہیں کہنا چاہتی، شیخ دانش کے ساتھ اس کی بیٹی بھی برابر کی مجرم ہے‘‘۔
’نور مقدم کیس اور اب فیصل آباد تشدد کیس‘، شوبز شخصیات پھٹ پڑیں-
دنانیر نے مزید کہا کہ ’’متاثرہ لڑکی کی ویڈیو شیئر کرنے سے بہتر ہے کہ شیخ دانش کی تصاویر شیئر کریں‘‘۔
اداکار احسن خان نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’’متاثرہ لڑکی کی ویڈیو شیئر کرنے کی بجائے ملزمان کا نام لے کر شرمندہ کریں اور اس کی بیٹی جو مذکورہ ویڈیو ریکارڈ کر رہی ہے اس کا بھی نام لیا جائے‘‘،
انہوں نے ملزمان کی رہائی کی خبر پر ’’یہ حالات ہیں‘‘ کہہ کر اپنے افسوس کا اظہار کیا۔
’نور مقدم کیس اور اب فیصل آباد تشدد کیس‘، شوبز شخصیات پھٹ پڑیں
یاد رہے کہ گزشہ روز ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی جس نے تہلکہ مچا دیا اور پاکستان میں خواتین کے تحفظ پر کئی سوالات کھڑے کر دیئے۔
فیصل آباد میں سہیلی کے باپ سے شادی سے انکار پر لڑکی کے ساتھ انسانیت سوز سلوک کیاگیا۔ لڑکی پر بہیمانہ تشدد کرکے ویڈیو ریکارڈ کی گئی۔ اس کے بال اور بھنویں کاٹنے کے بعد جوتے چاٹنے پر بھی مجبور کیا گیا
پولیس نے واقعے کی ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد مقدمہ درج کرکے مرکزی ملزم شیخ دانش سمیت 6 افراد کو گرفتار کیا جنہیں بعدازاں 50 ہزار کے عوض ضمانت پر رِہا کردیا گیا جوکہ پاکستان کے انصاف کے نظام پر ایک سوالیہ نشان ہے۔
تاہم خدیجہ نامی میڈیکل کی طلبہ تاحال انصاف کی منتظر ہے اور شوبز شخصیات سمیت پاکستان کے عوام بھی مزمان کو سخت سے سخت دینے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں