صنم جاوید کےلیےبڑی خوشخبری

0
80

ہاٹ لائن نیوز : انسداد دہشتگری عدالت لاہور میں زمان پارک میں پولیس پارٹی پر حملے کا مقدمہ ؛ پی ٹی آئی کارکن صنم جاوید کی ضمانت بعد از گرفتاری پر سماعت ہوئی ، عدالت نے صنم جاوید کی ضمانت منظور کر لی ۔

سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ تیس سے زیادہ لوگ اس واقعے میں زخمی ہوئے، صنم جاوید کو ضمنی بیان کی روشنی میں مقدمے میں نامزد کیا گیا، صنم جاوید کے کال ریکارڈ سے پتا چلا کہ وہ پولیس آپریشن کے دن سارا دن زمان پارک میں تھیں، صنم جاوید نے جو انٹرویو اور تقاریر کیں، ہم نے اسکا پولی گرافک ٹیسٹ کروایا ہے ، اس ٹیسٹ کی رپورٹ آنا ابھی باقی ہے، صنم جاوید سے 3 عدد پٹرول بم برآمد ہوئے، اس واقعے میں 13 سرکاری گاڑیاں جلیں، اسلام آباد پولیس عدالتی حکم پر زمان پارک آئی تھی، کارکنان نے عدالت کی توہین کی،پیٹرول بم والے کسی ملزم کی ضمانت نہیں ہوئی ۔

صنم جاوید کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ صنم جاوید کا کسی سیاسی عہدے، کسی سیاسی لیڈر سے کوئی تعلق نہیں، صنم جاوید سوشل میڈیا ایکٹوسٹ ہے، وہ بحیثیت ایکٹوسٹ ایک انٹرویو دے رہی تھی، کیا پانی والی پلاسٹک کی بوتلوں میں پیٹرول بم بنایا جا سکتا ہے؟

عدالت نے سرکاری وکیل سے استفسار کیا کہ پیٹرول بم کب اور کہاں سے برآمد ہوئے؟

جس پر سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ پیٹرول بم 16 نومبر کو زمان پارک سے برآمد ہوئے، زمان پارک میں زمین کھود کر پیٹرول بم برآمد ہوئے ۔

صنم جاوید کے وکیل نے بتایا کہ واقعہ 14 مارچ اور ان کے مطابق پیٹرول بم 16 نومبر کو برآمد ہوئے، سرکاری وکیل اس جگہ سے پٹرول بم برآمد کرنے کی بات کرے رہے جہاں انتظامیہ نے صفائی کروائی، بم ڈسپوزل والوں نے اس جگہ کو کلیئرنس دی ۔ایسا کیا ہے کہ ساری پولیس صنم جاوید کے پیچھے لگ گئی ہے جبکہ اسکا کوئی سیاسی تعلق نہیں، صنم جاوید سوشل میڈیا پر بے باک تبصرے کرتی ہیں، انہوں نے مریم نواز پر بھی تنقید کی ، اس لیے صنم جاوید کو ایف آئی آر میں شامل کیا گیا ۔

صنم جاوید پر تھانہ ریس کورس نے مارچ میں جلاؤ گھیراؤ کا مقدمہ درج کیا تھا ۔

Leave a reply