سابق وفاقی وزیر جاوید اشرف قاضی اور دیگر کیخلاف نیب ریفرنس واپس 43

سابق وفاقی وزیر جاوید اشرف قاضی اور دیگر کیخلاف نیب ریفرنس واپس

اسلام آباد احتساب عدالت نے سابق وفاقی وزیر لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ جاوید اشرف قاضی اور دیگر کے خلاف گالف کلب کیلئے ریلوے اراضی سستے داموں لیز پر دیکر قومی خزانے کو 2 ارب 16 کروڑ روپے کا نقصان پہچانے کے ریفرنس کو عدالتی دائرہ اختیار نہ ہونے کے باعث نیب کو واپس کر دیا ہے۔ احتساب عدالت اسلام آباد نمبر تین کے جج سید اصغر علی نےگالف کلب کیلئے ریلوے کی اراضی سستے داموں لیز پر دینے کے ریفرنس میں ملزمان کی بریت درخواستوں پر فیصلہ سنایا۔جبکہ ملزمان نے ترمیمی آرڈینینس کے تحت نیب ریفرنس کو چیلنج کر رکھا تھا اور بری کرنے کی استدعا کی تھی۔
عدالت نے فیصلے میں کہا کہ ترمیمی آرڈیننس کے بعد ریفرنس احتساب عدالت کے دائرہ اختیار میں نہیں آتا، اس لیے نیب کو واپس کیا جا رہا ہے۔ نیب ریفرنس کے مطابق 2001 میں گالف کلب کیلئے ریلوے اراضی کو لیز پر دینے کے عمل میں بےقاعدگی ہوئی اور غیر قانونی طور پر 33 سال کی لیز کو بڑھا کر 49 سال کیا گیا جبکہ 103 ایکڑ اراضی کو بھی 140 ایکڑ تک بڑھایا گیا جس سے قومی خزانے کو دو ارب روپے سے زائد کا نقصان پہنچا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں