دوسرا عمر عطاء بندیال کون ؟

0
66

ہاٹ لائن نیوز : اعتزاز احسن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جیل کے اندر جتنے ٹرائل ہوئے ہیں وہ ماضی کا قصہ ہیں ، فئیر ٹرائل کا پراسیس یہ ہے کہ عدالت میں عام شہری کو آنے جانے کی اجازت ہو ، آپ ایک آدمی کو سیکیورٹی نہیں دے سکتے اڈیالہ سے جوڈیشل کیمپلیکس تک نہیں لے جاسکتے ، ایک آدمی کو سیکیورٹی نہیں دے سکتے تو چوبیس کروڑ کو کیسے محفوظ کریں گے ، عمران خان کا ٹرائل جوڈیشل کیملیکس میں ہونا چاہیے ،جو بھی الزامات ہیں اس کا ٹرائل کورٹ میں ہونا چاہیےُ جیل میں بالکل ٹرائل نہیں ہوسکتا ،ملٹری کورٹ کے بارے میں بڑی غلط فہمی ہے ، ایک کاغذ کی بنیاد پر ملٹری کورٹ نے 253لوگوں کو سزا سنا دی جس میں کوئی گواہ نہیں کوئی ثبوت نہیں ، اگر ملزم کہتا ہے کہ میرا ٹرائل اوپن کرے تو ریاست کے پاس انکار کرنے کا کوئی جواز نہیں ، ملٹری کورٹس اغواہ برائے تاوان نہیں بلکہ اغوا برائے بیان پر چل رہی ، قاضی فائز عیسی بھی عمر عطا بندیال ہی نکلے ہیں ۔

اعتزاز احسن نے کہا کہ پاکستان میں سیاسی منظر نامے کے حوالے سے کوئی پیش گوئی نہیں کی جاسکتی ، آٹھ مئی کو کسی کو معلوم تھا کہ اگلے ہی روز اتنا بڑا جال بچھے گا ، پندرہ بیس لوگ کوور کمانڈر ہاؤس کو جلا دیں گے ،اتنا بڑا منصوبہ بن جائے گا کیا کوئی سوچ سکتا تھا ، اور ہم بس یہ سوچیں کہ شاید آج بھی آٹھ مئی ہوں ، خاور مانیکا بھی چلے والے محلے سے ہوکرا آیا اس لئے ایسا بیان دے ڈالا ، جب یہ معاملہ پہلے اٹھا تب اس نے بیوی کی تعریفوں کے پل باندھ دئیے ، اب وہ چلے والے محلے سے ہوکر آیا ہے تو ایسا بیان تو بنتا ہے ۔

Leave a reply