ایف آئی اے افسران اغواء برائے تاوان میں ملوث نکلے

0
65

لاہور: (ہاٹ لائن نیوز)ایف آئی اے سائبر کرائم سرکل لاہور میں گینگ آف 5 کا انکشاف ہوا ہے، سائبر کرائم میں کنٹریکٹ پر تعینات انسپکٹرز نے شہری کو یرغمال بنا کر مبینہ طور پر 3 کروڑ روپے تاوان لینے کا انکشاف کیا ہے۔

گینگ میں انسپکٹر وقاص، فخر، عباس، مصدق ، حمزہ شامل ہیں جنہوں نے قواعد و ضوابط کی صریح خلاف ورزی کرتے ہوئے بغیر کسی مقدمہ کے شہریوں کو یرغمال بنایا۔ ایف آئی اے افسران کے خلاف تاحال کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔

لاہور میں اہلکاروں کے ٹولے نے شہری ماجد کو دو روز تک یرغمال بنائے رکھا۔ ایف آئی اے سائبر کرائم کے انسپکٹر وقاص، سب انسپکٹر مصدق اور حمزہ نے شہری مجید کو ہری پور سے مبینہ طور پر اغوا کیا جس کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی سامنے آگئی ہے۔ سائبر کرائم میں کنٹریکٹ پر تعینات انسپکٹر شہری ماجد کو مبینہ طور پر تشدد کا نشانہ بناتے رہے۔

ایف آئی اے سائبر کرائم انسپکٹرز شہری مجید سے کھیلوں کی مختلف ویب سائٹس کے بارے میں پوچھتے رہے۔ غیر قانونی کارروائی کے دوران افسران اعلیٰ افسر سے رابطے میں تھے جبکہ انسپکٹر وقاص اور سب انسپکٹر مصدق انچارج کو بتائے بغیر لاہور سے ہری پور چلے گئے۔

ایف آئی اے حکام نے ایڈیشنل ڈائریکٹر کے خصوصی اسائنمنٹ پر جانے کے بارے میں آفس ایڈیٹر کو آگاہ کیا۔ رپورٹ میں سائبر کرائم افسر نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے واقعے میں ملوث افسران کے خلاف فوجداری کارروائی کی سفارش کی ہے جب کہ افسران کا کنٹریکٹ ختم کرنے کی بھی سفارش کی ہے۔

واقعے میں ملوث انسپکٹر چند سالوں سے لگژری گاڑیوں کے مالک ہیں۔ متاثرہ شہری نے ایف آئی اے سائبر کرائم کو درخواست بھی جمع کرادی جب کہ 5 کے گینگ کی جانب سے متاثرہ شہری کو دھمکیاں دینے کا بھی انکشاف ہوا ہے۔

Leave a reply