انوکھی فرمائش

0
89

لاہور: ( ہاٹ لائن نیوز) شہری نے لاہور ہائیکورٹ سے زہر پینے کی اجازت مانگ لی ، جسٹس راحیل کامران نے درخواست کے قابل سماعت ہونے پر فیصلہ محفوظ کرلیا ۔

مزنگ کے شہری سرور تاج نے زہر پینے کےلئے عدالت سے رجوع کر لیا ، عدالت نے استفسار کیا کہ آپ زہر کیوں پینا چاہتے ہیں ؟ جس پر درخواست گزار کا کہنا تھا کہ میرے پاس علم ہے ، میں قرآنی آیات پڑھ کہ زہر پیوں گا ، مجھے کچھ نہیں ہوگا ۔

جسٹس راحیل کامران نے ریمارکس دئیے کہ عدالت کسی کو زہر پینے کی اجازت کیسے دے سکتی ہے ؟ مجھے لگتا ہے آپ سستی شہرت کےلیے کوئی اسٹٹنٹ کھیل رہے ہیں ۔

درخواست گزار کا کہنا تھا کہ مجھے کوئی شہرت نہیں چاہیے ، میرا اللہ پر یقین ہے کہ مجھے کچھ نہیں ہوگا ، عدالت کا کہنا تھا کہ خودکشی اسلام میں حرام ہے اور آپ عدالت سے حرام کام کرنیکی اجازت مانگ رہے ہیں ۔

درخواست گزار کا کہنا تھا کہ میں قرآن پاک کی طاقت دنیا کو دیکھانا چاہتا ہوں ، لاہور کے موچی گیٹ پر سب کے سامنے یہ تجربہ کرنا چاہتا ہوں ۔

فاضل جج کا کہنا تھا کہ خود موت مانگنے والوں کے حوالے سے بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے موجود ہیں ، بھارت میں کینسر کے مریضوں نے موت آسان کرنے کےلیے سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا ، درخواست گزار کا کہنا تھا کہ میں نہیں مرو گا میرا یقین کریں ، جس پر عدالت نے کہا کہ ہم کسی غیر قانونی کام کی اجازت نہیں دے سکتے ، آپ کا اگر زیادہ دل ہے تو کر لیں پھر قانون کے مطابق آپکے خلاف جو کارروائی ہوگی وہ ہوجائے گی ۔

درخواست گزار کا کہنا تھا کہ میں نے ہوم سیکرٹری کو بھی درخواست دی ہے کہ موچی گیٹ پر زہر پینے کا تجربہ کرنے کی اجازت دی جائے ، عدالت کا کہنا تھا کہ آپ عدالتی وقت ضائع کر رہے ہیں ۔

Leave a reply